سیرت امام زین العابدین علیه السلام:

دوسری روایتوں میں دیکھیں تو امام سجاد علیه السلام یوں فرمارهے هیں:

جب عباد بصری نے آپ سے عرض کیا که: مولا ! آپ نے کیوں قیام اور جهاد کے بجائے حج کو اهمیت دی هے؟ تو آپ نے سوره توبه کی آیه نمبر ۱۱۲ کی طرف اشاره فرمایا جس میں ارشاد باری تعالٰی هے:" التائبون العابدون الحامدون السائحون الرّاکعون السّجدون الآمرون بالمعروف والناهون عن المنکر والحافظون لحدود الله وبشر المؤمنین" یعنی یه لوگ (اهل ایمان) توبه کرنے والے ،عبادت کرنے والے، حمد پروردگار بجالانے والے، راه خدا میں سفر کرنے والے، رکوع کرنے والے، سجده کرنے والے، نیکیوں کا حکم دینے والے، برائیوں سے روکنے والے اور الله کی حدود (قوانین) کی حفاظت کرنے والے هیں اور (اے پیغمبر) آپ انهیں(مؤمنوں کو) جنت کی بشارت دیدیں"

اس آیت شریفه کی طرف اشاره فرمانے کے بعد آپ نے ارشاد فرمایا: " اگر هم ان خصوصیات سے مزین دوستوں کو پائیں تو ان کے ساتھ ملکر جهاد کرنا حج سے زیاده فضیلت رکھتا هے"[1]۔



[1] فروع کافی کتاب الجهاد


موضوعات مرتبط: مہم ترین عامل ظہور

تاريخ : یکشنبه بیست و نهم اردیبهشت 1392 | 17:39 | نویسنده : سيد سجاد اطهر موسوي تبتي | نظر Comment


.: Weblog Themes By RoozGozar.com :.